شرح فراق مدح لب مشکبو کریں

شرح فراق مدح لب مشکبو کریں
غربت کدے میں کس سے تری گفتگو کریں

یار آشنا نہیں کوئی ٹکرائیں کس سے جام
کس دل ربا کے نام پہ خالی سبو کریں

سینے پہ ہاتھ ہے نہ نظر کو تلاش بام
دل ساتھ دے تو آج غم آرزو کریں

کب تک سنے گی رات کہاں تک سنائیں ہم
شکوے گلے سب آج ترے روبرو کریں

ہم دم حدیث کوئے ملامت سنائیو
دل کو لہو کریں یا گریباں رفو کریں

آشفتہ سر ہیں محتسبو منہ نہ آئیو
سر بیچ دیں تو فکر دل و جاں عدو کریں

''تر دامنی پہ شیخ ہماری نہ جائیو

دامن نچوڑ دیں تو فرشتے وضو کریں''
Is link ko click karo or join karo earning kay leye best website hai main be use kar raha hu.best of luck                                                


No comments

Theme images by RBFried. Powered by Blogger.